نظیر کہوٹ


Frist Punjabi National Conference Opposes Division of Punjab
پہلی پنجابی قومی کانفرنس :پنجاب کی غیرآئینی،غیرقانونی ،غیر فطری ،جبری تقسیم کے خلاف پنجابیوں دانشوروں،ادیبوں،شاعروں،کارکنوں کا شدید ردعمل


۔پنجاب ہزاروں سال قدیم ایک قومی لسانی ،ثقافتی ،انتظامی ،جغرافئیائی،نظریاتی اور فکری وحدت ہے۔قیام پاکستان کے بعد ہی پنجاب کی مزید تقسیم ،پنجابی زبان اور پنجابی اکثریتی آبادی کے خلاف سازش شروع ہو گئی تھی ۔جو جھوٹ پر گھڑی ایک نام نہاد سرائیکی قومیت،زبان ،علاقہ اور ثقافت کی بنیاد پر 1962میں شروع کی گئی تھی ۔ ۔ٹھیک تیس سال بعد 1990 میں کراچی سندھ میں رہایش پذیر ایک پنجابی نوجوان نظیر کہوٹ نے پنجاب کی تقسیم کی سازش کے خلاف شدید ردعمل اور غم و غصہ کا اظہار کرتے ہوئے پنجاب کی تقسیم کی گھناونئی سرائیکی سازش کا پردہ چاک کر ڈالا. نوائے وقت کراچی میں سلسلہ وار مضمون لکھ کر، پنجاب اور پنجابی کو درپیش سنگین مسائل پرمبنی تحقیقی کتاب “آو پنجابی کو قتل کریں” لکھ کر اور تین زبانوں پنجابی ،اردو ،انگریزی میں نیوز میگیزن “جئینئس کراچی” کی اشاعت کا آغاز کرکے. پاکستان کی تاریخ میں پہلی پنجابی قوم پرست تنطیم لوک سیوا پاکستان کا قیام عمل میں لا کر .جس کا مقصد پرامن سیاسی و عوامی جدوجہد کے زریعے پنجاب اور پنجابی حقوق کا حصول تھا۔

نظیر کہوٹ کو جدید پنجابی قوم پرستی اور پنجابی قوم پرست تحریک کا بانی بھی مانا جاتا ہے کہ جب ہر چھوٹا بڑا پنجابی ترقی پسند ,پنجابی لیفٹ پنجابی دانشور،پنجابی حاکم ،پنجابی سیاستدان، کالم نگار،خواہ دائیں بازو کا تھا یا بائیں بازو کا پنجاب پرجبری و غیرفطری طور پر اردومیڈیا اور ریاست کی سرپرستی کے ذریعے مسلط کردہ سامراجی سازش فراڈ سرائیکی صوبے ،سرائیکی زبان ،سرائیکی قومیت کی اندھا دھند حمائت کر رہا تھا نطیر کہوٹ نے ان کے تمام پنجاب دشمن نظریات جو ہنجاب کی سالمیت و سلامتی پر حملہ آور تھے کو سختی سے رد کرتے ہوئے پنجاب کی تقسیم کے خلاف علم بغاوت بلند کردیا۔

نظیر کہوٹ ہی وہ پہلا پنجابی قوم پرست ہے جس نے پنجاب کی تقسیم کے خلاف پنجابیوں کو منظم کرنا شروع کیا، 1990میں تیس سال پہلے کراچی میں پنجابی کلچرڈے اور پنجابی پگ دیہاڑ منانے کا سلسلہ شروع کیا اور پنجاب کی تاریخ میں پہلی پار پہلی وساکھ یعنی 30 اپریل 1990کو باقاعدہ طور پر پنجاب کلچرل ڈے اور پنجابی پگ دیہاڑ منانے کراچی کی سڑکوں پر پنجابی ڈریس پہن کر سر پر پنجابی پگڑی باندھ کر گھومتے اور سی ویو پر بھنگرے ڈالتے ہوئے پنجابی کلچر ڈے منانے کا آغاز کیا۔نظیر کہوٹ نے ہی پنجاب کی تاریخ میں پہلی بار ایک پنجابی کی حیثیت سے اٹھائیس سال پہلے 1992 میں لہور پریس کلب میں ایک پریسں کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے پنجاب کی کسی بھی قسم کی لسانی یا انتظامی تقسیم کو شدت سے رد کرتے ہوئے اس کے خلاف عوامی تحریک چلانے کا اعلان کیا . اسی طرح یہ نظیر کہوٹ ہی تھا جس نے کراچی سندھ سے آکر پنجاب کی تاریخ میں پہلی بار8 اگست 2009 میں پنجاب کی سالمیت پر پہلی تاریخ پنجابی قومی کانفرنس کا انعقاد عمل میں لایا جس میں تمام پنجابی دانشوروں،ادیبوں ،شاعروں،تنظیموں اور کارکنوں نے شامل ہو کرپنجاب کی تقسیم کےخلاف ببانگ دہل مزاحمت اعلان کیا ۔

یہ نظیر کہوٹ ہی تھا جس نے پنجابی قوم پرست تحریک کا ایجنڈہ آج سے گیارہ سال پہلے 2009 میں سوشل میڈیا پر اسوقت متعارف اور لانج کیا .سوشل میڈیا پر پنجاب کی تقسیم اور پنجاب و پنجابی کو درپیش مسائل اور سرائیکی سازش کے خلاف کوئی پنجابی ذکر تک نہ کرتا تھا.جس وقت اس کا کسی نے سوچا تک نہ تھا۔ نظیر کہوٹ نےسوشل میڈیا پر پنجابی تحریک لانچ کردی .

اٹھائیس سال پہلے 1992 میں لہور پریس کلب میں خطاب کے دوران دئے گئے نظیر کہوٹ کے پیش کردہ ایجنڈے کی بنیاد پر پر آج پنجاب اور پنجابی حقوق کی حصول کے لئے سرگرم عمل ساری کی ساری پنجابی تحریک کھڑی ہے ۔ نظیر کہوٹ نے ہی پنجاب کی تاریخ میں پہلی بار 31 دسمبر 2010 کو پنجابی زبان تحریک کی بنیاد رکھی لہور پریس کلب میں ایک پریس کانفنرس سے خطاب کرتے ہوئے ۔اور پنجابی لینگوئج موومنٹ کا بیس نکاتی ایجنڈہ میڈیا میڈیا کے ذریعے پنجاب تک پہنچایا اور پنجابی زبان تحریک کئے پلیٹ فارم سے لہور کی سڑکوں پر جلسے ،جلوسوں ،بھوک ہڑتالوں اورمظاہروں کی بنیاد رکھی ۔

نظیر کہوٹ ہی تھا جس نے پہلی وساکھ 13اپریل 2011 کو پنجاب کی تاریخ میں پہلی بار پنجابی زبان تحریک کے پلیٹ فارم سے پنجابی رہتل تے پگ دیہاڑ (Punjabi Cultural and Turaban Day)منانے کا آغاذ کیا۔ قیام پاکستان کے بعد پنجابکی تاریخ میں ایسی کوئی مثال نہیں ملتی جب کسی پنجابی نے باقاعدہ سڑکوں پر آکر پنجاب کی بارہ کروڑ آبادی کو پنجابی کلچرڈے منانے کی دعوت دی ہو یا اعلان کیا ہو۔

نظیر کہوٹ نے قوم پرست پنجابی تحریک کو پہلی بار عوامی سطح پر لانچ کیا .بلکہ اسے پانج نکاتی قومی ایجندہ بھی پہہلی بار دیا ۔اور پنجابی تحریک کی بنیاد مندرجہ ذیل 6 نکات پر رکھی


۔ 1 پنجاب کی ہزاروں سال قدیم ایک ناقابل تقسیم قومی وحدت ہے اس کی کوئی بھی کسی بھی قسم کی تقسیم خواہ لسانی ہو یا انتظامی ہرگز منظور نہیں۔

۔ 2 پنجاب زبان کو پنجاب کی تعلیمی ،سرکاری،دفتری ،عدالتی ،پارلیمانی زبان قرار دیا جائے۔

۔ 3 پنجاب اسمبلی ،قومی اسمبلی ،سینیٹ آف پاکستان اور پاکستانی کی کسی بھی سیاسی جماعت ،فرد یا ادارے کو قرارداد لہور اور انڈین انڈیپیڈینس ایکٹ کے تحت پنجاب کی لسانی یا انتظامی کی بھی قسم کی تقسیم کا کوئی اختیار یا مینڈیٹ نہیں ۔

۔ 4 سرائیکی پنجاب کی زبان ہے نا پنجاب سے اس کا کوئی تعلق ہے ۔سرائیکی پنجاب میں غیر مقامی نسلی اقلیت ہیں ۔پنجاب میں پنجابی بن کر رہیں۔

۔ 5 پنجاب اسمبلی پنجابی لینگوئج ایکٹ منظور کرے ۔

۔ 6 جنوبی پنجاب سے جاگیرداری ،گدی نشینی کا استحسالی نظام ختم کیا جائے پنجاب نہیں جاگیریں تقسیم کے جنوبی پنجاب میں ظلم ،نا انصافی ۔لوٹ مار اور استصال ختم کیا جائے ۔

پنجاب کی سیاسی تاریخ میں ایسی کوئی مثال نہیں کہ تن تنہا کشی شخص نے بیک وقت پنجاب کی تقسیم کے خلاف ،نام نہاد سرائیکی صوبے کے قیام کے خلاف، پنجاب میں اردو کی جگہ پنجابی زبان کو پنجاب کی تعلیمی،سرکاری،دفتری ،عدالتی ، پارلیمانی اور میڈیا کی زبان بنانے کے آئینی ،جموری،قانونی ،انسانی حق کے حصول کے لئے پنجابی زبان تحریک کا قیام عمل میں لا کر سڑکوں پر عوامی اور سیاسی جہدوجہد کا آغاز کیا ہو۔ پنجاب دشمنوں ،پنجاب فروشوں اور غدار پنجابیوں کو پنجابی تحریک میں نظیر کہوٹ کا وجود کانٹے کی طرح کھٹکتا ہے ۔ جو اس کی ہمہ وقت تمام انسانی ۔اخلاقی ،قانونی ،شرم و حیا کی حدود عبورکرتے ہوئے انہتائی مجرمانہ انداز میں اسکی کردار کشی کیسراسر جھوٹ اور بنیتی پر منی انتہائی گھناونی ،نفرت انگیز اور شرمناک مہم چلا رہے ۔ تاکہ نظیر کہوٹ کو پنجابی تحریک سے بھگا کر بے دخل کرکے اپے مذموم عزائم اور ارادوں کی تکمیل کر سکیں ،مگر جس میں وہ ناکام ہوچکے ۔مونہہ کہ کھا چکے ۔

8 اگست 2009 کو لہور میں پنجاب کی سالمیت کے موضوع پر منعقدہ اسی پہلی پنجابی کانفرنس میں نطیر کہوٹ کی تقریر پر مشتمل یہ وڈیو تاریخی ریکارڈ کی درستگی تمام پنجابیوں اور پنجاب دوستوں کی توجہ اور رائے کے لئے یہاں شئیر کی جا رہی ہے۔


فیصل شیخ
حوالہ جات
آو پنجابی کو قتل کریں نظیر کہوٹ
ماہنامہ جئنئیس کراچی
مہینہ وار لہراں لہور
ویکلی رویل لہور
پنجابی تھیمز،شفقت تنویر مرزا ڈان ڈاٹ کام
پنجابی ناول واہگا نطیر کہوٹ
پنجابی ناول دریا برد نظیر کہوٹ
پریس کانفرنس لہور پریس کلب ۱۰ دسمر ۲۰۱۰
پیرس کانفرنس لہور پریس کلب مارج ۲۸،۱۹۹۲
نظیر کہوٹ سوشل میڈیا وڈیو،فیس بک یو ٹیوب
پنجابی نینشل کانفرنس ۹ اگست ۲۰۰۹ ڈان ڈاٹ کام
پنجابی کلچرل ڈے ۱۴ اپریل ۲۰۱۱ ڈان ڈاٹ کام
جنگ کراچی ۱۹۹۳ٴ۹۴

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here